rang KHush-bu mein agar hal ho jaiy

rang KHush-bu mein agar hal ho jaiy

wasl ka KHwab mukammal ho jaiy

chand ka chuma hua surKH gulab

titare dekhe to pagal ho jaiy

mein andheron ko ujalun aise

tirgi aankh ka kajal ho jaiy

dosh par barishen le ke ghumen

mein hawa aur wo baadal ho jaiy

narm sabze pe zara jhuk ke chale

shabnami raat ka aanchal ho jaiy

umr bhar thame rahe KHush-bu ko

phul ka hath magar shal ho jaiy

chiDiya patton mein simaT kar soe

peD yun phaile ki jangal ho jaiy

رنگ خوش بو میں اگر حل ہو جائے

وصل کا خواب مکمل ہو جائے

چاند کا چوما ہوا سرخ گلاب

تیتری دیکھے تو پاگل ہو جائے

میں اندھیروں کو اجالوں ایسے

تیرگی آنکھ کا کاجل ہو جائے

دوش پر بارشیں لے کے گھومیں

میں ہوا اور وہ بادل ہو جائے

نرم سبزے پہ ذرا جھک کے چلے

شبنمی رات کا آنچل ہو جائے

عمر بھر تھامے رہے خوش بو کو

پھول کا ہاتھ مگر شل ہو جائے

چڑیا پتوں میں سمٹ کر سوئے

پیڑ یوں پھیلے کہ جنگل ہو جائے