Bandh Lein Hath Pe Senay Pe Saja Lein Tumko – Wasi Shah

Pakistani-flag

Bandh Lein Hath Pe Senay Pe Saja Lein Tumko

Bandh Lein Hath Pe Senay Pe Saja Lein Tumko

Jee Mein Ata Hai K Taweez Bana Lein Tumko

 

Phir Tumhein Roz Sanwarein, Tume Bharta Dekhein

Kyun Na Angan Mein Chanbeli Sa Laga Lein Tumko

 

Jaise Baghon Mein Koi Phool Chuna Karta Hai

Ghar K Guldan Mein Pholoun Sa Saja Lein Tumko,

 

Kya Ajab Khuwaishain Uthti Hain Hamare Dil Mein

Kar K Munna Sa Hawaon Mein Uchalein Tum Ko

 

Is Qadar Toot K Tum Pe Hamain Pyar Ata Hai

Apni Behnon Mein Bharein Mar Hi Dalein Tumko

 

Hai Tummare Liye Kuch Aisi Aqeedat Dil Main

Apne Hathon Mein Duaon Sa Utha Lein Tumko

 

Jan Denay Ke Ijazat Bhe Nahe Detay Ho

Warna Mar Jyein Abhe Mar K Mana Lein Tumko

 

Ab To Bas Ek He Khuwaish Hai Kissi Mor Pe Tum

Hum KO Bikhray Huay Mil Jao Shanbalein Tum Ko

آئینہ

 

باندھ لیں ہاتھ پہ سینے پہ سجا لیں تم کو 

 

جی میں آتا ہے کہ تعویذ بنا لیں تم کو 

 

پھر تمہیں روز سنواریں تمہیں بڑھتا دیکھیں 

 

کیوں نہ آنگن میں چنبیلی سا لگا لیں تم کو 

 

جیسے بالوں میں کوئی پھول چنا کرتا ہے 

 

گھر کے گلدان میں پھولوں سا سجا لیں تم کو 

 

کیا عجب خواہشیں اٹھتی ہیں ہمارے دل میں 

 

کر کے منا سا ہواؤں میں اچھالیں تم کو 

 

اس قدر ٹوٹ کے تم پہ ہمیں پیار آتا ہے 

 

اپنی بانہوں میں بھریں مار ہی ڈالیں تم کو 

 

کبھی خوابوں کی طرح آنکھ کے پردے میں رہو 

 

کبھی خواہش کی طرح دل میں بلا لیں تم کو 

 

ہے تمہارے لیے کچھ ایسی عقیدت دل میں 

 

اپنے ہاتھوں میں دعاؤں سا اٹھا لیں تم کو 

 

جان دینے کی اجازت بھی نہیں دیتے ہو 

 

ورنہ مر جائیں ابھی مر کے منا لیں تم کو 

 

جس طرح رات کے سینے میں ہے مہتاب کا نور 

 

اپنے تاریک مکانوں میں سجا لیں تم کو 

 

اب تو بس ایک ہی خواہش ہے کسی موڑ پر تم 

 

ہم کو بکھرے ہوئے مل جاؤ سنبھالیں تم کو 

 

 

Translate In English

Tie your hands and decorate your chest

I want to make you an amulet

 

Then beautify you every day and see you grow

Why don’t you plant jasmine in the yard?

 

Like picking a flower in the hair

Decorate you like flowers in a vase at home

 

What wonderful desires arise in our hearts

Blow you up in the winds of celebration

 

We love you so much

Fill your arms and kill you

 

Never be in the veil like a dream

Never call you in your heart as you wish

 

There is some such devotion in your heart for you

Lift up your hands in prayer

 

You don’t even allow yourself to die

Otherwise, die and celebrate you now

 

As the light of the moon is in the chest of the night

Decorate you in your dark houses

 

Now you have only one wish at some point

Find us scattered, take care of you

In conclusion Share It

More Parveen Shakir - Nazams
More Wasi Shah - Poetries